malaria hone ki alamat aor wajuhat ملیریا ہونے کی علامات ،وجوہات اور اثرات

0
300

malaria hone ki alamat aor wajuhat ملیریا ہونے کی علامات ،وجوہات اور اثرات

malaria hone ki alamat ملیریا ایک انتہائی مہلک بیماری ہے یہ اینوفلیز enopheles مچھر کے کاٹنے سے   جسم میں منتقل ہوتی ہے .متاثرہ مچھر پلازمونیم پیراسائید  plasmodium parasit ہوتا ہے جب یہ مچھر آپکو کاٹتا ہے ، تو پیرا سائیٹ آپکے خون میں شامل ہوجاتا ہے ۔

پیرا سائیٹ کی نشونما

malaria hone ki alamat  ایک دفعہ جب یہ پیرا سایئٹ آپکے جسم میں منتقل ہو جائیں تو جگر میں جا کر میچور mature ہو جاتے ہیں کچھ دنوں بعد یہ پیرا سائیٹ خون میں شامل ہو کر خون کے سرخ خلیات red blood cells کو متاثر کرنے لگ جاتے ہیں ۔

48 سے 72 گھنٹوں کے درمیان یہ خون کے سرخ خلیات میں جاکر multiply  تعداد بڑھاتے ہیں اور متاثرہ سیلز کو ختم کر دیتے ہیں ۔ متاثرہ  سرخ خلیات پر اس کے اثرات 2 سے 3 دن کے اندر ظاہر ہو تے ہے۔

 پلیٹ لیٹس کی کمی یا ذیادتی کے جسم پر اثرات تفصیل کے لیئے نیچے لنک پر کلک کریں

https://www.7knows.com/article/848/the-role-of-platelets-deficiency-or-abuse-in-the-political-arena/

ملیریا سے متاثر علاقے

malaria hone ki alamat خصوصََا گرم اور مرطوب آب و ہوا والے علاقوں میں ملیریا  پایا جاتا ہے جہاں پر یہ پیراسائیٹس زندہ رہ سکتے ہیں  world health organization   ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق سن 2016 میں 91 ممالک میں تقریبَََا ملیریا کے تقیریبََا 21 کروڑ 60 لاکھ کیسز رپورٹ ہوئے ۔ مادہ مچھر کے کاٹنے سے  ملیریا  ہوتا ہے جو پلازمونیم پیراسائیٹ سے متاثرہ ہو ملیریا پیرا سائیٹس کی 4 اقسام ہیں جو انسانوں کو متاثر کرتی ہیں وہ درج ذیل ہیں ۔

1 . plasmodium  vivax پلازموڈییم وائیویکس

2۔   plasmodium ovale اوویل

3.   plasmodium  malariae پلازموڈییم ملیرییائی

4 ۔plasmodium falciparum  پلازموڈییم فیلسی پارم

شروع کی 3 اقسام کی نسبت پلازموڈییم فیلسی پارم ذیادہ مہلک ہے جو کہ جان لیوا بھی ثابت ہو سکتی ہے

  حاملہ خاتون جو ملیریا سے متاثر ہو  اپنے بچے میں بھی یہ بیماری منتقل کرنے کا باعث بنتی ہے یہ قسم پیدائشی ملیریا congenital malaria کہلاتی ہے ۔

ملیریا چونکہ خون کے ذریعہ  درج ذیل طریقوں سے منتقل ہوتاہے۔

1 اعضاء کی منتقلی اور پیوند کاری   organ transplant

2 . پہلے سے استعمال شدہ سرنج یا سوئی استعمال کرنے سے

3۔ انتقال خون

ملیریا کی علامات

 عمومََا 10 دن سے 4 ہفتوں کے درمیان ملیریا کی علامات ظاہر ہوتی ہیں کچھ کیسز میں ،کئی علامات کئی مہینیوں تک ظاہر نہیں ہو پاتیں کچھ ملیریا پیراسائیٹ جسم میں داخل تو ہو جاتے ہیں مگر لمبے عرصے تک وہ جسم پر اثر انداز نہیں ہوتے ۔

ملیریا کی عام  علامات درجذیل ہیں

1 ۔ ٹھنڈے پسینے آنا جو کہ ذیاد سے کم ہوسکتے ہیں ۔

2. سر درد

3. متلی

4۔ ڈائریا

5. خون کی کمی

6. پاخانےمیں خون آنا

7 قومہ

8 ۔ پیٹ میں درد

ملیریا کی تشخیص

ڈاکٹر سے علاج کے سلسلے میں ملنے پر ڈاکٹر آپکا جسمانی معائنہ کریں گے اگر آپ میں ملیریا کی علامات پائی گئیں تو کچھ بلڈ ٹیسٹ اس کومرض کی تشخیص کے لیے کچھ ٹیسٹ کروائیں جائیں گے یہ ٹیسٹ ظاہر کریں گے کہ

کیا آپ کو ملیریا ہے

ملیریا کی قسم

اگر آپ کا انفیکشن پیرا سائیٹ کے ذریعے ہے تو کونسی دوائیاں تجویز کی جائیں

خون میں آئرن کی مقدار کا تعین

بیماری سے متاثرہ عضو کی نشاندہی

ملیریا سے پیدا ہونے والی پیچیدگیاں 

ملیریا انسانی جسم میں بہت سے پیچیدگیا ں پیدا کر سکتا ہے

   cerebral malaria  دماغ میں خون کی شریانوں کا سوج جانا

پھیپھڑوں میں فلوئڈ fluid کا بھر جانا ، سانس میں دشواری   pulmonary edema

 گردے جگر اور تلی کا ناکارہ ہو جانا

 anemia خون کے سرخ خلیات کی تباہی سے آئرن کی کم

https://www.youtube.com/watch?v=UeKvXYLHs04

ملیریا سے بچائو کے لئے احتیاطی تدابیر 

ملیریا سے بچنے کے لیے کوئی ویکیسین دستیاب نہیں ہے اگر آپ ایسے علاقے میں جارہے ہیں جہاں ملیریا عام ہے یا اگر آپ ایسے علاقے میں رہتے ہیں اپکو ملیریا سے بچنے کی ڈاکٹر دوائیں تجویز کر سکتا ہےڈاکٹر کی تجویز کردہ دوائیں سفر سے پہلے دوران اور بعد میں لی جانی چاہی اگر آپ ایسے علاقے میں رہتے ہیں جہاں ملیریا عام ۔ہے مچھر دانی میں سونے سے مچھر کے حملہ سے بچا جا سکتا ہے

اپنے جسم کو اچھی طرح ڈھانپ کر اور ایسے اسپریز جن میں DEET موجود ہو انکے استعمال سے انفیکشن سے بچا جاسکتا ہے

malaria hone ki alamat

سیاسی میدان میں پلیٹ لیٹس کی کمی یا زیادتی کا کردار

 

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں