CORONAVIRUS HEROES NOBLE ACT STORIES URDU WRITING

0
213
CORONAVIRUS HEROES NOBLE ACT STORIES URDU WRITING

لاہور کے ایک تاجر کا مفت آکسیجن سلنڈر  اور پلازمہ عطیہ

CORONAVIRUS HEROES NOBLE ACT STORIES URDU WRITING پوری دنیا کوکرونا وائرس نے خوف میں لپیٹے ہوا تھا لیکن کئ افراد نے ہیرو کے روپ میں لوگوں کی مدد کی

پاکستان میں جہاں آکسیجن سلنڈر کو سٹور کر کے بلیک میں منہ مانگی قیمت پرفروخت کیا جارہا ہے  وہیں لاہور ایک تاجر نےجو خود کرونا کے مریض تھے انہوں نے نا صرف اپنا پلازمہ عطیہ کیا بلکہ 150 آکسیجن سلنڈر غریب کرونا کے مریضون کوفراہم کیے

اس کے علاوہ غریب مریضوں کی 50000 فی کس امداد بھی کی۔

 یہ تمام خدمات  services انھون نے بلامعاوضہ اپنے ملازمین کے ذریعے انجام دیں ۔

ان کی اس خدمت service کے عوض 120 افراد کو نئ زندگی ملی

اگر یہ سٹوری  آپ ویڈیو کی صورت میں سننا چاہتے ہیں تو نیچے لنک پرکلک کریں

https://youtu.be/J-P_rFtZDoY

CORONAVIRUS HEROES NOBLE ACT STORIES URDU WRITING کرونا وائرس کی آفت میں فرائض انجام دینے والے امام احمد علی

مارچ کے مہیے میں جب نیویارک new york  کے شہر میں 18 ہزار کے کرونا covid-19 کے کیس سامنے ائے تو مسلمانوں کی شرعی طریقہ کے مطابق تدفین غیر ممکن نظر آنے لگی لیکن  تب ایک پاکستانی امام احمد علی نے اس کا بیٹرا اٹھایا ۔

کرونا وائرس  covid-19 کا شکار ہونے کے باوجود انھون نے اپنی خدمات پیش کیں ۔

احمد علی ٹیکسی چلاتے ہیں ۔ اور بروکلین مسجد mosque میں امام ہیں ۔ کہتے ہیں کہ ایک دن کافئ ذیادہ افراد کی اموات کے بعد مجھے تدفین کے سلسلہ میں  کال آئی تو گھر والوں نے مجھے جانے سے  روکا لیکن میں نے اس اسلامی فریضہ کو ادا کرنا  اپنا فرض سمجھا ۔

پہلے دن  4 جنازے پڑھائے پھر چند ہی دنوں میں اموات کی  تعداد 20تک پہنچ گئی ۔

لیکن اٹھویں دن  امام احمد علی خود کرونا کا شکار ہوگئے ۔

احمد علی نے گھر میں قرنطینہ کر لیا لکین تدفین کا عمل ترک نہیں کیا اور بیماری ٹھیک ہونے کے بعد ذیادہ جوش و خروش کے ساتھ خدمات سرانجام دینے لگے ۔

امام صاحب نے  بعض ایسے جنازے پڑھائے جن میں جنازہ پڑھنے والے یہ اکیلے ہی تھے ۔

170 کی قریب تدفین کیں ۔ 70 سے زائد میتوں کو غسل دیا ۔ 5 سے 6 میتیں ایسی بھی تھیں جن کا کوئ والی وارث نہیں تھا لیکن بس اتنا علم تھا کہ یہ مسلمان ہیں ۔

امام احمد علی نے 7 ہفتوں میں 200 جنازے پڑھائے

ااحمد علی نے یہ تمام خدمات services بلامعاوضہ اد کیں ۔

انکا  15 سالہ بیٹا مسجد میں جمعہ کا خطبہ انگریزی میں دیتا ہے

امام صاحب  کو صوفی ازم میں بہت دلچسپی ہے ۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ اس کے علاوہ کیا کرتے ہیں اس کے جواب میں انھوں نے کہا کہ پیدائش سے لے کر تدفین تک سارے کام کرتا ہوں ،بچوں کے کان میں اذان، نکاح،رجسڑ میرج سرٹیفیکیٹ ،علیحدگی،جنازے اور قبر میں مٹی ڈالنے تک

    کرونا وائرس  سے پاکستانیوں کی جنگ اور جوابی وار     پرمزاح تحریر ویڈیو کے ساتھ

https://www.7knows.com/article/1450/coronavirus-se-pakistanion-ki-dushmani-aor-jawabi-war/

pakistan  میں coronavirus  کی وبا کے خلاف ڈاکٹرز اور طبی عملہ کی خدمات اور جان کی  قربانی 

کرونا وائرس covid-19 بیماری کے خلاف فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹرز اور طبی عملہ بہت ذیادہ اس وائرس کا نشانہ بنے pakistan پاکستان covid-19 coronavirus کا شکار ہونے والے ڈاکٹرزdocters اور عملے کی تعداد صرف   2 جون 2020 تک ہی 1900 سے ذیادہ تھی اور ب یہ تعداد 5000 سے تجاوز کر گئ ہے۔ ۔۔۔۔ جاری ہے قسط نمبر 1

پاکستانی مریض ایک پر کشش تجربہ گاہ پرمزاح تحریر   نیچے لنک پر کلک کریں

https://www.7knows.com/article/681/pakistani-patient-an-attractive-laboratory/

 coronavirus کرونا سے متعلق احتیاطی تدابیر

CORONAVIRUS HEROES NOBLE ACT STORIES URDU WRITING

30 سے زائد عملہ اور ڈاکٹرز کی اس بیماری سے موت واقع ہو گئی

– لوگوں سے نہ ہاتھ ملائیں اور نہ ہی گلے ملیں

– صابن کےساتھ  ہاتھوں کو باقاعدگی سےکم از کم 20 سیکنڈز تک دھویں

– بغیر ہاتھ دھوئے چہرے کے کسی حصہ کو نہ چھوئیں ۔

– کھانسی آنے پر اپنے منہ کو ٹشو پییر یا کہنی سے ڈھانپ لیں

– استعمال شدہ ٹشو کو فوری ضائع کر دیں ۔

– ہجوم میں جانےکی بجائے گھروں میں رہیں

۔گھرسے باہر نکلتے وقت ماسک کا لازمی استعمال کریں ۔

۔ باامر مجبوری باہر جانے پر ایک دوسرسے 6فٹ کا فاصلہ رکھیں ۔

صابن نا ہونے کی صورت میں سینیٹائزر کا استعمال کریں ۔

اپنی نیند پوری کریں اور خوراک کا خاص خیال رکھیں

اپنے ایمیون سسٹم کو مزید بہتر کریں ۔

عوامی مقامات پر کسی بھی جگہ کو ہاتھ کو چھونے سے گریز کریں ۔

 آپ کھانسی، نزلہ اور سانس لینے میں دشواری کے ساتھ ساتھ بخار میں مبتلا ہوں تو فوری طور ڈاکٹر سے رجوع کریں۔

CORONAVIRUS HEROES NOBLE ACT STORIES URDU WRITING

جاری ہے

قسط نمبر 1

 

 

 

 

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں